أرشيف الوسم : Special

خدمت کارڈ ۔ زندہ باد

میری مرحومہ اہلیہ صائمہ عمار نابینا تھیں۔ دو سال کی عمر میں تیز بخار کی وجہ سے انکی آپٹک نرو کو نقصان پہنچا ۔ جسکی وجہ سے بینائی مکمل طور پر جاتی رہی۔ آپٹک نرو کو پہنچنے والے نقصان کا نہ دنیا کے پاس اس وقت کوئی علاج تھا نہ ہی اب تک اس سلسلے میں کوئی پیش رفت ہو ...

مزید پڑھئے »

پی آئی اے

دنیا میں صرف پانچ قابل ذکر ممالک ایسے ہیں جہاں ریل گاڑی نہیں۔ اس میں Andorra,Cyprus,Iceland,Malta اور افغانستان شامل ہے۔

مزید پڑھئے »

مطیع الرحمن نظامی، میرے بچپن کی حسین یاد

یہ وہ زمانہ تھا جب ٹیلی ویژن نے ہماری مجلسی زندگی پر ڈاکہ نہیں ڈالا تھا۔ محلوں کی چوپالیں اور تھڑے رات گئے تک آباد رہتے تھے۔ سیاست سے لے کر ادب اور معیشت سے لے کر سیاحت تک کونسا ایسا موضوع ہے جو ان محفلوں میں زیر بحث نہ آتا تھا۔ یہ محفلیں گلی محلوں کے درمیان موجود چوپالوں‘ ...

مزید پڑھئے »

بہت خوشی کی خبر

بہت خوشی کی خبر ہے۔ عطاء الحق قاسمی پاکستان ٹیلی ویژن کے، جو اب پی ٹی وی کے نام سے زیادہ معروف ہے، چیئرمین ہو گئے۔ اس خوشی میں ہم نے انھیں مبارک باد دی اور کیک بھی چکھ لیا۔ لیکن اسی کے ساتھ ہم نے ان پر یہ واضح کیا کہ یہ عہدہ آپ کو مبارک ہو۔ مگر یہ ...

مزید پڑھئے »

آنکھوں پر بندھی پٹی اتاریئے

ایران اور سعودی عرب اپنی تاریخی، تہذیبی، سیاسی، اقتصادی اور علاقائی مسابقت کو کوئی بھی نظریاتی جامہ پہنانے کی کوشش کریں۔ ان کی لڑائی ماضی اور حال میں دنیا کے کسی بھی کونے میں دو طاقتوں کے درمیان ہونے والی کسی بھی ایسی لڑائی سے مختلف نہیں جس میں بالا دستی حاصل کرنے کے لئے ہر دیدہ و نادیدہ، مقدس ...

مزید پڑھئے »

ایک دن میں چھے سو کیلوریز

ایک اور سال شروع ہوا، وعدوں اور ایک اور سیٹ ترتیب پایا۔ خود سے کیے گئے ان وعدوں اور بنائی گئی قراردادوں کی معیاد ایک آدھ ہفتہ، یا دس دن ہوتی ہے۔ تاہم اس مرتبہ میں نے ایک ایسا وعدہ کیا جو میں پورا سال نبھانے کا عزم رکھتا ہوں۔ دراصل گزشتہ کئی برسوں سے میں موٹاپے سے بچنے کے ...

مزید پڑھئے »

’’من کی دنیا میں نہ دیکھے میں نے شیخ و برہمن‘

جو عقائد میرے ذہن میں پروان چڑھے ، اب تک اگر وہ مکمل طور پر محو نہیں ہوئے تو بھی کمزور ضرور پڑ چکے ہیں۔ اس دوران دنیا آگے قدم بڑھا چکی۔ ہم ایک مختلف دنیا میں پروان چڑھے تھے اور جب سراٹھا کر دیکھتے ہیں تو ہمارے ارد گرد کی دنیا بالکل مختلف ہے۔ مجھ جیسے افرادجو انقلابِ ر ...

مزید پڑھئے »

تہران ریاض کو اپنے جھگڑے خود طے کرنے دیں

’’اُمہ-اُمہ‘‘ کے مسلسل مگر منافقانہ ورد کے باوجود حقیقت ہے تو بس اتنی کہ نیل کے ساحل سے لے کر تابخاکِ کاشغر کوئی دو یا تین مسلمان ممالک بھی ایسے نہیں جو باہم مل کر سعودی عرب اور ایران کے حکمرانوں کو معقولیت کی راہ اختیار کرنے پر مجبور کرسکیں۔ عرب اور عجم کا جھگڑا بہت قدیم ہے۔ سائرسِ اعظم ...

مزید پڑھئے »