پی آئی اے طیارے سے منشیات برآمدگی معمہ بن گئی

برطانیہ نے اب تک اسٹیشن منیجر کو برآمد اشیاء کی بارے میں آگاہ کیا نہ حکام کو تحریری مطلع کیا
فرسٹ آفیسر سمیت عملے کے 11 ارکان کو پوچھ گچھ کے بعد پاسپورٹ واپس کردیئے جو آج صبح کراچی آگئے
کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)لندن کے ہیتھرو ایئرپورٹ پر پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن کے طیارے کو روکنے اور منشیات کی مبینہ برآمدگی کا معاملہ معمہ بنا ہوا ہے۔ برطانیہ نے تاحال قومی ایئرلائن کے اسٹیشن منیجر کو طیارے سے برآمد ہونے والی اشیاء کے بارے میں آگاہ کیا ہے اور نہ ہی پی آئی اے حکام کو تحریری طور پر کچھ بتایا گیا۔ طیارے کے فرسٹ آفیسر سمیت عملے کے 11ارکان کو پوچھ گچھ کے بعد پاسپورٹ واپس کردیے گئے‘ پی آئی اے کا تمام عملہ پرواز نمبر پی کے788کے ذریعے جمعرات کو صبح 8بجے کے قریب کراچی پہنچ گیا۔ اس سلسلے میں ذ رائع کا کہنا ہے کہ رجسٹریشن نمبر بی جی کے طیارے کا پی آئی اے انجینئرنگ میں آخری چیک8مئی کو ہوا تھا۔ ذرائع کاکہنا ہے کہ اے این ایف اور کسٹمز نے ہینگر سے جانے کیلئے طیارے کو باقاعدہ کلیئرنس لیٹر جاری کیا تھا جبکہ بوئنگ 777 کو لندن روانگی سے قبل بھی منشیات سے پاک ہونے کاکلیئرنس لیٹر جاری کیا گیاتھا۔

متعلق امتیاز کاظمی