سی پیک کو بھارتی نظریے سے نہ دیکھیں، پاکستان کا امریکا سے مطالبہ

ان خیالات کا اظہار وزیر داخلہ احسن اقبال نے اپنے دورہ امریکا کے دوران جان ہوپکنس اسکول آف ایڈوانس انٹرنیشنل اسٹڈیز میں سیمینار سے خطاب میں کیا۔

مزید جانئیے: چین نے سی پیک پر امریکی اعتراضات مسترد کردیے

وفاقی وزیر داخلہ نے امریکی حکام پر زور دیا کہ پاکستان کو خطے کی دیگر ریاستوں اور ان کے مسائل کے ساتھ جوڑنے کے بجائے پاکستان کے ساتھ اس کی اہلیت کے مطابق تعلقات رکھے جائیں۔

سی پیک کے حوالے سے امریکی اعتراضات پر وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ سی پیک کسی کے خلاف سازش نہیں اور نہ ہی کوئی سیکیورٹی پلان ہے بلکہ یہ معاشی ترقی کی جانب ایک منصوبہ ہے جس کی مدد سے پاکستان میں توانائی اور بنیادی ڈھانچے سمیت دیگر اہم شعبوں کے ذریعے سرمایہ کاری پاکستان آئے گی۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان نے سی پیک پر امریکی اعتراضات مسترد کر دیئے

امریکا میں پاکستانی سفیر اعزاز احمد چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستانی اور امریکی حکام کے درمیان حالیہ ملاقاتوں نے دونوں ممالک کے تعلقات کو دوبارہ معمول پر لانے میں راہ ہموار کی ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ ہفتے امریکی سیکریٹری دفاع جیمز میٹس نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ سی پیک ایک متنازع علاقے سے گزر رہا ہے اور امریکا اس حقیقت کو نظر انداز نہیں کر سکتا۔

امریکی سیکریٹری دفاع کے اس بیان کو اسلام آباد میں امریکا کی جانب سے بھارتی موقف کی تائید کی نظر سے دیکھا گیا۔

متعلق امتیاز کاظمی