بیوی پر تشدد اور زیادتی کا الزام،وائٹ ہاؤس کا ایک اور اہلکار مستعفیٰ

واشنگٹن : امریکی حکام کے مطابق وائٹ ہاؤس تقاریر لکھنے کیلئے تعینات اہل کار نے گھریلو تشدد کے واقعات اور الزامات پر استعفیٰ دے دیا۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کی جانب سے جاری رپورٹس کے مطابق وائٹ ہاؤس میں تعینات اہل کار نے بیوی کی جانب سے گھریلو تشدد اور زیادتی کا الزام عائد کیا تھا، جس کے بعد اطلاعات منظر عام پر آنے کے بعد اہل کار نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔

 

 

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بطور صدر عہدہ سنبھالنے کے بعد یہ وائٹ ہاؤس کا دوسرا اہل کار ہے جس نے گھریلو تشدد اور زیادتی کے الزام پر استعفیٰ دیا۔

 

وائٹ ہاؤس کے نائب ترجمان راج شاہ کا کہنا ہے کہ انہیں ڈیوڈ سورینسین کے خلاف واقعات کی اطلاعات کا علم جمعرات کی شام کو ہوا، جس پر ڈیویڈ سے رابطہ کیا گیا، جس پر اس نے بیوی کی جانب سے عائد تمام الزامات کی تردید اور استعفیٰ کی تصدیق کی ہے۔ سماء

Email This Post

متعلق قمر یوسف زئی

قمر المنیر یوسف زئی انیس سو نوے سے شعبہ صحافت سے وابستہ ہیں۔ مردان سے تعلق رکھنے والے قمریوسف زئی 2006 میں‌پیشہ وارانہ فرائض‌کی انجام دہی کے سلسلے میں‌افغانستان میں‌جیل میں‌بھی رہے۔ بین الاقوامی امور میں‌اعلیٰ‌تعلیم یافتہ قمر یوسف زئی نارویجن ٹی وی کے ساتھ ساتھ کوئٹہ، پشاور اور اسلام آباد کے ممتاز اخبارات سے وابستہ رہے۔ قمر یوسف زئی القمرآن لائن سے بحیثیت مینیجنگ ایڈیٹر وابستہ ہیں