ایم کیو ایم میں ہونے والی ٹوٹ پھوٹ میں پیپلز پارٹی کا کوئی کردار نہیں ہے مولا بخش چانڈیو

ایم کیو ایم والے ایک دوسرے کے راز فاش کرتے ہیں پھر روتے ہیں
فاروق ستار جس انداز سے بولتے ہیں اس انداز میں سوچتے نہیں ہیں
جو انسانوں کو بے سکون کرتے تھے آج خود بے سکون ہوگئے ہیں
یہ لوگ اردو بولنے والوں کو اپنا غلام سمجھ رہے تھے، میڈیا سے گفتگو
حیدرآباد( مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما مولا بخش چانڈیو کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم رہنما ایک دوسرے کے روز فاش کرتے ہیں پھر رات کو روتے ہیں۔ ان کا رونا ان کے کی غلطیوں کی نشاندہی کرتا ہے۔ حیدر آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولا بخش چانڈیو کا کہنا تھا کہ معلوم نہیں ڈاکٹر فارق ستار کیا ہوگیا ہے۔6,6باراستعفے دیتے ہیں اور پھر واپس لے لیتے ہیں۔ فارو ق ستار جس انداز سے بولتے ہیں اس انداز سے سوچتے نہیں ہیں۔ مولا بخش چانڈیو نے کہا کہ ایم کیو ایم میں ہونیوالی ٹوٹ پھوٹمیں پیپلز پارٹی کا کوئی کردار نہیں ہم کسی بھی سیاسی صورتحال سے فائدہ نہیں اٹھانا چاہتے‘ ایم کیو ایم والے خود بتائیں کہ وہ کون ہے جو انہیں لڑارہا ہے۔ ڈاکٹر فارق ستار کو کنوینر شپ سے ہٹانا ایم کیو ایم کا اندرونی معاملہ ہے۔ پیپلز پارٹی کے رہنما کا کہنا تھا کہ کراچی اور حیدر آباد کے بانی مسائل کے ذمہ دار یہی ہیں جو برسوں سے وہاں قابض ہیں۔ آپ انسانوں کو بے سکون کرتے تھے آج خود بے سکون ہوگئے۔ ان خا حال آج سب دیکھ رہے ہیں۔ ایک دوسرے کے بخئے ادھیڑتے ہیں۔ راز فاش کرتے ہیں اور پھر رات کو روتے ہیں۔ جس طرح کراچی کے لوگوں نے ان پر اعتماد کیا وہ اس پر پورے نہیں اترے‘ وہ اردوبولنے والوں کو غلام سمجھ رہے ہیں۔اب کراچی کے عوام کو بھی فیصلہ کرلینا چاہئے۔

متعلق سرفرازاحمد عباسی